ویب سائٹ ابتدائی مراحل میں ہے، اس پر کام جاری ہے، اگر آپ کو کوئی غلطی نظر آتی ہے تو براہ کرم ہمیں مطلع کریں-


جامعۃ العلوم الاسلامیہ الفریدیہ

شہیداسلام حضرت مولانا محمد عبداللہ شہیدؒ نے 1984ء میں اسلام آباد کے سیکٹر ای سیون (Sector E-7) کے علاقے اور ماگلہ کی خوبصورت پہاڑیوں کے دامن میں سیٹھ ہارون جعفر مرحوم کے تعاون سے مدرسہ تعمیر کیا۔ شہیدِ اسلام حضرت مولانا محمد عبداللہ شہیدؒ کا خلوص سے لگایا ہوا پودا آج مارگلہ کی پہاڑیوں کے دامن میں تنا آور درخت اور ایک عظیم دینی یونیورسٹی کی شکل اختیار کر چکا ہے، جس میں اس وقت 1500سے زائد طلباءقرآن کریم اور دیگر دینی علوم حاصل کر رہے ہیں۔


جامعہ کے بارے میں مزید پڑھیں


مختصر نکات

  • جامعہ فریدیہ ایک غیر سرکاری، دینی اور علمی ادارہ ہے.
  • جامعہ اپنے نصاب تعلیم، نظم و نسق اور تربیت کے اعتبار سے ایک امتیازی حیثیت رکھتا ہے.
  • جامعہ میں علوم اسلامیہ کی ادنیٰ سے اعلیٰ درجات تک معیاری تعلیم دی جاتی ہے.
  • جدید علوم وفنون کی پہلی جماعت سے میٹرک تک تعلیم کا بھی خصوصی انتظام ہے.
  • تقریباً 1500 طلبہ کے طعام و قیاماور ضروریات کا انتظام جامعہ کی طرف سے مفت کیا جاتاہے.
  • ان سب مصارف کا مدار صرف اللہ تعالیٰ کی توفیق سے اہل خیر حضرات کی مالی امداد پر ہے.
  • جامعہ کی کوئی خاص مستقل آمدنی نہیں، نہ ہی حکومت سے کوئی مالی امداد وصول کی جاتی ہے.
  • جامعہ کو سپورٹ کریں اور ایک عظیم کاز کا حصّہ بنیں!

مدارس دینیہ کی اہمیت


دینی مدارس کا مقصد اسلامی تعلیمات کے ماہرین،قرآن و سنت پر گہری نگاہ رکھنے والے علماءتیار کرنا اور ایسے رجال کار پیدا کرنا جو مسلم معاشرہ کا اسلام سے ناطہ جوڑیں


مزید پڑھیں

تعلیمی سال 1442کی تفصیلات


جامعہ فریدیہ کے تعلیمی سال 1442 ہجری میں نئے اور پرانے طلبہ کی مجموعی تعداد اور تفصیلی معلومات


مزید پڑھیں

درس نظامی


درس نظامی ملا نظام الدین محمد سہالوی سے منسوب طریقۂ تدریس و نصاب، نصاب تعلیم و نظام تدریس جو ملا نظام الدین نے مشرق کی دینی درسگاہوں کے لیے تیار کیا تھا


مزید پڑھیں

اپ ڈیٹس

 

آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ